Summan Shah | یوتھ آف پاکستان دی ہیگ کے زیرِاہتمام مشاعرہ, شامِ سخن

1 4

Report by: Suman Shah
France
suman_shah@hotmail.fr

یوتھ آف پاکستان دی ہیگ کے زیرِاہتمام مشاعرہ, شامِ سخن

14 جنوری 2012 رات8 بجے یوتھ آف پاکستان دی ہیگ کے زیرِ اہتمام محفلِ مشاعرہ منعقد کی گئی ـ
ہالینڈ کے یخ بستہ ماحول میں بارش کے رِم جھِم میں بھیگتی ہوئی رات نے اس وقت حسین پیراہن زیب تن کر لیا جب یورپ بھر سے معروف شعراء کرام نے ہالینڈ میں بزمِ سخن کا آغاز کیا ـ ایسی علمی اور ادبی محفلیں روح کی تراوٹ کا سبب بنتی ہیں ـ یورپ کی خاموش اور پُرمشقت زندگی میں جب شاعری کے نرم و نازک احساسات کمالِ مہارت سے نازک نازک جذبوں میں ڈھال کر پیش کئے جاتے ہیں تو تو دل و دماغ پے چھائی افسردگی کو تہہ در تہہ متاتے ہوئے اطمینان قلب کا باعث بنتے ہیں ـ

پاکستانی کمیونٹی یورپ میں آج ہر ملک میں عملی طور پے متحرک نظر آتی ہے ـ کئی افراد انفرادی یا اجتماعی
طور پے اپنےاپنے انداز میں ادب کو پیش کر کے عام لوگوں تک اپنے خیالات اور احساسات کو پہنچانے میں مصروف عمل ہیں ـ ملک سے زبان سے اپنی محبت کا بے ساختہ اظہار پوری دنیا میں اب اکثر وبیشتراب نظر آتا ہے ـ
ہالینڈ میں یہ شام ایسی ہی زبان سے ملک سے جذبوں سے محبت کے اظہار کی ایک کوشش تھی ـ اس خوبصورت شام کااہتمام دلکش آرائش سے آراستہ اسٹیج پر مخصوص ثقافتی انداز میں چاندنی اور گاؤ تکیے کے ساتھ کیا گیا
اس منفرد تقریب میں نظامت کے فرائض پیرس سے تعلق رکھنے والی مشہور شاعرہ محترمہ سمن شاہ صاحبہ نے انجام دیے ـ صدارت کے فرائض ناروے سے مسعود منور صاحب نے ادا کیے مہمانِ خصوصی انگلینڈ سے محترم جمیل الرحٰمن اور جرمنی سے خالد ملک ساحل تھے ـ ہالینڈ سے نوجوان شاعر عدیل شاکر نے بھی شرکت کی جو ہالینڈ میں بیحد مقبول ہیں ـ
انتظامیہ میں شامل شازیہ شفیق فرام ہالینڈ ارشاد قمر فرام ہالینڈ تحریک انصاف دی ہیگ ہالینڈ اور پاکستان ویلفئیر ایسوسی ایشن دی ہیگ ہالینڈ نے اس پروگرام کیلیۓ تعاون کیاـ
مختصر تعارف!!
ناروے سے محترم مسعود منور صاحب کا تعلق تدریسی شعبے سے ہے ـ اردو اور پنجابی میں 5 مجموعہ کلام شائع ہو چکے ـ ان کے مجموعہ کلام کے نام یہ ہیں ـ
دیو مالائی
٬سدا سبز سرگم
٬ سورج کی بشارت
٬قائد اعظم دا وار
دیس نکالا
آپ القمر آن لائن پر مدیر کی حیثیت سے بھی وابستہ ہیں ـ
محترم خالد ملک ساحل جرمنی سے تشریف لائے تھے ـ ان کا مجموعہ کلام ہے
"” فصیلِ شب””
شعر
ایک تکلیف کا دریا ہے بدن میں لیکن بیٹھ کر
اس کے کنارے نہیں رو سکتا
جمیل الرحٰمن انگلینڈ سے ان کے مجموعے کلام ہیں ـ
مزاحمتی شاعری
٬نظمیں ترانے گیت
ہم پر سورج کہیں ڈوبتا ہی نہیں
خواب ہوا اور خوشبو
مجموعہ غزل۔۔
کوئی بازگشت
ہم نے پانی پے جہاں ہونٹ بچھائے تھے
جمیل گاؤں کی گوری کو گاگر وہیں بھرتے دیکھا
زمین جب آنکھ کھولے گی
لہو کی بوند بولے گی
اشفاق قمر شعری مجموعہ
تو شائد لوٹ آئے
جب کوئی محبت کرتا ہے
ـ محبت بھول جانے دو
صدائیں ساتھ رہتی ہیں
ستارے اترنے دو
اندلس پکارتا ہے "” سپینش تاریخ "”
عدیل شاکر ہالینڈ سے نوجوان شاعر ہیں ـ ان کا مشہور زمانہ شعر ہے
وہ ذرے ماہرِ پرواز خود کو کہ رہے ہیں
جِنہیں کل ہاتھ میں آندھی اٹھائے پھِر رہی تھی
محترمہ سمن شاہ نے انقلابی نظم سنائی
لِکھوں کیسے ؟
تمہارے پیار کی باتیں
وصلِ یار کی راتیں
تمہاری یاد کے قصے
غمِ دل زار کی باتیں
میرے جاناں نگاہیں جس طرف اٹھیں
لہومیں تر بترلاشوں کے چہروں پر سوالوں کے نشاں پوچھیں
بھلا کیا جرم تھا میرا مجھے بے موت کیوں مارا
غزل ظلمت میں گھِر گئے ہیں رِشتے بکھر گئے ہیں
ہے تِیرگی غضب کی ہم سب ہی ڈر گئے ہیں
ہیں بستیوں میں وحشی
اِنسان کدہر گئے ہیں
پروگرام کا پہلا حصہ مشاعرے پر مبنی تھا ـ جس میں شعراء کرام نے اپنی نظمیں اور غزلیں سنا کر سماں باندھ دیا ـ
ـ پروگرام کے دوسرے حصے میں محفل موسیقی کا انعقاد کیا گیا تھا ـ جس میں شہزاد علی خان نے اپنے فن کا مظاہرہ کیا اور خوب داد حاصل کی ـ محفل موسیقی میں شہزاد علی خان نے محفل میں موجود شعراء کرام کی غزلیات گاکر خوب داد سمییٹی ـ محفلِ مشاعرہ میں ہالینڈ کمیونٹی کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کر کے مشاعرے سے خوب محظوظ ہوئے ـ مشاعرے کے اختتام پر مہمانوں کی تواضع پُرتکلف کھانے سے کی گئی ـ ہالینڈ کی یہ ادبی محفل ان چند محفلوں میں سے ایک محفل تھی جن کو بہت دیر تک یاد رکھا جائے گا ـ

1 Comment
  1. muhammad mahmood ahmad says

    رپورٹ بہت پسندآئی ۔۔ بولنے کا انداز اچھا لگا۔۔۔ کیا یہ خالد ملک ساحل
    منڈی بہاؤالدین سے ھیں؟اگر وھی ھیں تو میرے سلام پہنچا دیجئے گا۔۔ دیار غیر کے ان شاعروں اور ادیبوں کو میرا اور وطن کی سرمست ھوا کا مشترکہ سلام قبول ھو۔۔۔۔۔۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.